Skip to main content

اردو میں ڈیمو مصنوعات

پاکستان میں ہر سال لاکھوں بچے 80/90 فیصد نمبر لیکر بھی میڈیکل کی تعلیم حاصل نہیں کرپاتے اور لاعلمی کی وجہ سے ایسے مضامین کا انتخاب کرلیتے ہیں جن کا آنے والے دور میں اب کوئی مستقبل نہیں ۔۔دیکھا جائے تو بچوں سے زیادہ ماں باپ ہمت ہار جاتے اور بچوں کا کیرئیر بنانے کئے دردنہیں لیتے ۔یہ نہیں سوچتے کہ آپ کی اولاد ہی آپ کا مستقبل ہے،اولاد کا مستقبل سنوارنا دراصل خود اپنا مستقبل سنوارنا ہے ،کل کرغزستان سے آئے میرے ایک دوست بتا رہے تھے کہ پاکستان بھی بدلے گا اور صرف پانچ سال بعد پاکستان انتہائی ترقی کی جانب اٹھے گا ،اس لئے پاکستانیوں کو اپنی اولادوں کو ابھی سے پروفیشنل ایجوکیشن کی طرف لے آنا چاہئے۔

یہاں بہت سے میکنزم چینج ہوں گے ،بڑے ادارے اگر نہ سمجھ سکے تو وہ ڈوب جائیں گے اور چھوٹے ادارے سمجھ گئے تو اوپر آجائیں گے کیوں اگلا دور اب تعلیم ہنر اور علم کاہے ۔